آج کل انصاف وہی ہے جو مرضی کا ہو، چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ

0
26

سپریم کورٹ میں کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ریماکس دیئے کہ آج کل انصاف وہی ہے جو مرضی کا ہو، خلاف فیصلہ آجائے تو انصاف نہیں ہوتا۔

سپریم کورٹ میں سرگودھا سے تعلق رکھنے والی لڑکی سے مبینہ زیادتی پر سماعت چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے کی۔حمیرہ نامی خاتون نے درخواست جمع کروائی جس میں بتایا گیا کہ ملزم ندیم مسعود میرے ساتھ زیادتی کرتا رہا جس کے نتجے میں میں حاملہ ہوگئی اور اب میری بچی 8سال کی ہوچکی ہے۔سماعت کے دوران خاتون کے والد نے چیف جسٹس سے کہا کہ ملزم ندیم مسعود اثرورسوخ کا حامل شخص ہے، ہمیں انصاف دلایا جائے۔جس پرچیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ آج کل انصاف وہی ہے جو مرضی کا ہو، خلاف فیصلہ آجائے تو انصاف نہیں ہوتا۔

فریقین کا موئقف سننے کے بعد عدالت نے قرار دیا کہ استغاثہ اپنا مقدمہ ثابت کرنے میں ناکام رہا جس کی بناء پر ملزم ندیم مسعود کو 8سال بعد مقدمے سے بری کیا جاتا ہے۔عدالت نے فیصلے میں بتایا کہ یہ زنا باالرضاء کا کیس کے کیونکہ لڑکی زیادتی کے وقت بالغ تھی اورلڑکی نے 7ماہ تک کسی رپورٹ کا اندراج نہیں کروایا مگر جب لوگوں نے دیکھ لیا تو زیادتی کا الزام لگا دیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here