ایف بی آر اور ٹیکس نظام میں عوام کا اعتماد بحال کریں گے، وزیراعظم

0
10

وزیر اعظم پاکستان عمران خان کا کہنا ہے کہ ٹیکس نظام میں اصلاحات کر کے ایف بی آر اور ٹیکس نظام پر عوام کا اعتماد بحال کرنا ہوگا۔

وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وزیر اعظم ہاؤز میں ایف بی آر میں اصلاحات کے لیئے اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر اور چیئرمین ایف بی آر جہانزیب خان اور دیگر افسران نے شرکت کی۔اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان ایک ایسا ملک ہے جہاں ملکی اخراجات کا 30فیصد صرف جمع شدہ قرضوں پر سود کی ادائیگی کے لیئے خرچ ہوجاتا ہووہاں یہ مجرمانہ غفلت ہوگی اگر ٹیکس اکٹھا کرنے کے نظام میں اصلاحات کو نظر انداز کیا جائے۔

عمران خان نے کہا کہ وفاقی حکومت کے ریفامز ایجنڈے میں ایف بی آر ریفارمز بھی شامل ہے جو کہ اہم ہے۔وزیر اعظم نے گزشتہ حکومتوں کا زکر کرتے ہو ئے کہا کہ بد قسمتی سے اس سے پہلے ٹیکس اکٹھا کرنے کے نظام میں خرابیوں کو دور کرنے اور ٹیکس بیس بڑھانے پر بلکل بھی دھیان نہیں دیا گیا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ عام شہریوں کا ایف بی آر اور ٹیکس کے نظام سے اعتماد اٹھ چکا ہوا ہے۔ماضی میں بزنس کمیونٹی اور عوام سے ٹیکس وصولی میں پیچیدگیاں، ٹیکس حکام کی جانب سے ہراساں کرنا اور جمع شدہ ٹیکس کے پیسے میں کرپشن اور حکمران کے شاہانہ رہن سہن پر بے دریغ استعمال کی وجہ سے عوام کا اعتبا ر اٹھ چکا ہے۔ہمیں ٹیکس نظام میں اصلاحات کر کے ایف بی آر اور ٹیکس نظام پر عوام کا اعتماد بحال کرنا ہے۔

وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ کہ ملک میں بڑے ٹیکس چوروں سے ٹیکس وصولی اور ٹیکس نان فائلرز کوٹیکس نیٹ میں لانے پرایف بی آر خصوصی توجہ دے۔ جبکہ بے نامی جائیداد رکھنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق موئثر اقدامات کرے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here