ميرے کہستاں! تجھے چھوڑ کے جاؤں کہاں

0
4

ميرے کہستاں! تجھے چھوڑ کے جاؤں کہاں

تيري چٹانوں ميں ہے ميرے اب و جد کي خاک

روز ازل سے ہے تو منزل شاہين و چرغ

لالہ و گل سے تہي ، نغمہ بلبل سے پاک

تيرے خم و پيچ ميں ميري بہشت بريں

خاک تري عنبريں ، آب ترا تاب ناک

باز نہ ہوگا کبھي بندہ کبک و حمام

حفظ بدن کے ليے روح کو کردوں ہلاک!

اے مرے فقر غيور ! فيصلہ تيرا ہے کيا

خلعت انگريز يا پيرہن چاک چاک!

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here