کپتان سرفراز احمد نے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر کی تنقید کو ذاتی حملہ قرار دے دیا۔

0
11

نسل پرستانہ جملوں کی ادائیگی پر پابندی کا شکارقومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر کی تنقید کو ذاتی حملہ قرار دے دیا۔

جنوبی افریقہ کے خلاف ایک روزہ سیریز کے تیسرے میچ میں متوقع شکست کے پیش نظراپنے غصے پر قابو نہ رکھتے ہوئے قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے جنوبی افریقی کھلاڑی ایندائل فیلکوایو کے بارے میں نسل پرستانہ جملے ادا کیئے تھے جسے اسٹمپ مائک کے ذریعے کرکٹ شائقین نے براہ راست سنا۔

اسی پر پاکستان کے سابق فاسٹ بولر راولپنڈی ایکسپریس نے قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمدپرکڑی تنقید کرتے ہوئے ان سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تھا۔ راولپنڈی ایکسپریس نے نجی ٹی وی چینل پربات کرتے ہوئے کہا کہ آئی سی سی کے قانون کو دیکھتے ہوئے سرفراز احمد پر کم میچز کی پابندی لگی ہے اور وہ سستے میں چھوٹ گئے ہیں۔

جنوبی افریقہ سے واپسی پر کراچی ایئر پورٹ پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا کہ سابق فاسٹ بولر شعیب اختر تنقید نہیں کر رہے بلکہ ذاتیات پر حملے کر رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ میں نے اپنے غلطی تسلیم کرتے ہوئے معافی بھی مانگ لی ہے۔ آئی سی سی نے اس کے باوجود جو فیصلہ سنایا وہ آپ سب کے سامنے ہے۔سرفراز احمد نے پی سی بی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا انہوں نے بہت اچھے طریقے سے اس کیس کو ہینڈل کیا۔

واضع رہے کہ جنوبی افریقی ٹیم کے کپتان فاف ڈو پلیسی نے سرفراز احمد کے نسل پرستانہ جملے کسنے پر ان کی معذرت قبول کرتے ہوئے ان کو معاف کردیا تھا۔ لیکن آئی سی سی نے قواعد کی خلاف ورزی پر کپتان سرفراز احمد پر 4میچز کی پابندی لگا دی تھی۔جس کے بعد سرفراز احمد کی غیر موجودگی میں شعیب ملک کو کپتانی سونپ دی گئی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here